• December 4, 2021

غیر رسمی معیشت کی حوصلہ شکنی کے لئے 25،000 روپے مالیت کے پریمیم پرائز بانڈز کا آغاز کیا گیا

حکومت نے غیر رسمی معیشت کی حوصلہ شکنی اور انسداد منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی انسداد مالی معاونت سے متعلق قوانین کی تعمیل کے لئے 25،000 روپے مالیت کے رجسٹرڈ پرائز بانڈز کا آغاز کیا ہے۔

مزید یہ کہ مالی ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کی شرائط کی تعمیل کرنے کے ل the بیرئر پرائز بانڈز کی دستاویز کرنے کا فیصلہ۔
یہ فیصلہ تمام فرقوں کے غیر رجسٹرڈ پرائز بانڈ کو دستاویز کرنے کا حصہ ہے۔ اس سے قبل حکومت نے سال 2017 میں 40،000 روپے مالیت کے پریمیم بانڈز کا آغاز کیا تھا۔ 40،000 روپے مالیت کے بیرنڈر بانڈز 30 دسمبر 2021 تک واپس لئے جاسکتے ہیں۔

فائنانس ڈویژن نے ایک نوٹیفکیشن کے ذریعے 09 دسمبر 2020 سے 25،000 روپے مالیت کے پریمیم پرائز بونڈ (رجسٹرڈ) کے اجراء کی منظوری دے دی۔

اسی کے ساتھ ہی حکومت نے 09 دسمبر 2020 سے 25،000 روپے والے مالیت کے مراکز بند کرنے کا بھی اعلان کیا۔

اکتوبر 2020 کے آخر تک 25،000 روپے والے مالیت دہندگان کے انعامی بانڈوں میں کل سرمایہ کاری تقریبا 164 ارب روپے ہے۔ غیر رجسٹرڈ پرائز بانڈز میں سرمایہ کاری 31 مئی 2021 تک کے حوالے کرنی ہوگی۔

بیئرر پرائز بانڈز رکھنے والوں کو اسٹیٹ بینک بینکنگ سروسز ، نیشنل بینک آف پاکستان ، حبیب بینک لمیٹڈ ، یونائیٹڈ بینک لمیٹڈ ، ایم سی بی بینک لمیٹڈ ، الیڈ بینک لمیٹڈ اور بینک الفلاح لمیٹڈ کے ذریعے پریمیم پرائز بانڈ میں تبدیل کیا جاسکتا ہے۔

مزید برآں ، بیئرر پرائز بانڈز کو خصوصی سیونگ سرٹیفکیٹ یا ڈیفنس سیونگ سرٹیفکیٹ کے ساتھ بھی اسٹیٹ بینک بینکنگ سروس کارپوریشن اور مجاز تجارتی بینکوں اور قومی بچت مراکز کے ساتھ تبدیل کیا جاسکتا ہے۔

مزید برآں ، اسٹیٹ بینک بینکنگ سروسز کارپوریشن اور مجاز تجارتی بینک برانچوں اور قومی بچت مراکز میں بچت کھاتوں کے ذریعہ بانڈ ہولڈر کے بینک اکاؤنٹ میں رقم منتقل کرنے کے ذریعے بیئرر بانڈز کو انکش کیا جاسکتا ہے۔

فنانس ڈویژن کے مطابق ، پریمیم پرائز بانڈز کی قرعہ اندازی سہ ماہی کی بنیاد پر ہوگی جس میں 707 انعامات دیئے جائیں گے۔ پہلا انعام 30 ملین روپے ہوگا۔
پریمیم پرائز بانڈز رکھنے والے کو بھی دو سالہ بنیادوں پر 1.79 فیصد منافع ملے گا۔

Top-Tax-Consultants-Lahore-Pakistan
Ads:
Top-Tax-Consultants-Lahore-Pakistan-Global-Tax-Consultants-Tax-News-FBR
ads

Admin

Read Previous

بین الاقوامی تیل کی قیمت میں اضافے پر شیئر مارکیٹ میں 165 پوائنٹس کا اضافہ ہوا

Read Next

ایف بی آر نے انکم ٹیکس گوشوارہ جمع کروانے کی تاریخ 24 دسمبر تک بڑھا دی

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *