• January 23, 2021

ایف بی آر نے اب گاڑیوں کی درآمد پر ڈیوٹی اور ٹیکس کی شرحوں کو اپ ڈیٹ کیا ہے

فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے درآمدی گاڑیوں کے کسٹم کلیئرنس کے لئے ڈیوٹی اور ٹیکس کی تازہ ترین شرحیں جاری کردی ہیں۔

وفاقی حکومت پاکستان نے ٹیکس دہندگان کو گاڑیاں درآمد کرنے کے لئے مختلف مراعات / چھوٹ میں 30 جون 2020 تک کی تازہ ترین شرحوں کے مطابق توسیع کردی ہے۔
تفصیلات مراعات / چھوٹ کے تحت دیئے گئے ہیں:

میں. ایس آر او 577 (I) / 2005 مورخہ 06.06.2005 (کسٹم ڈیوٹی ، سیلز ٹیکس ، مخصوص مخصوص اور استعمال شدہ آٹوموٹو گاڑیوں کی درآمد پر ود ہولڈنگ ٹیکس سے چھوٹ)

ایشین کی پرانی اور استعمال شدہ آٹوموٹو گاڑیوں کی درآمد کا مطلب افراد کی نقل و حمل ہے ، جو نیچے دیئے گئے جدول کے کالم (2) میں واضح ہے ، کسٹم ایکٹ 1969 کے پہلے شیڈول کے پی سی ٹی نمبر of 87. P3 کے تحت آتا ہے (69V69 of کا چہارم) ، کو کسٹم ڈیوٹی ، سیلز ٹیکس اور ود ہولڈنگ ٹیکس کے بہت زیادہ سے چھوٹ حاصل ہے جو اس کے کالم (3) میں مذکور مجموعی رقم سے زیادہ ہے ،

Sr. NoAutomotive vehicles of Asian makes meant for transport of persons.Duty and taxes in US$ or equivalent amount in Pak rupees.
(1)(2)(3)
1Up to 800ccUS$4800
2Up to 801-1000ccUS$6000
3From 1001 – 1300ccUS$13200
4From 1301 – 1500ccUS$18590
5From 1501 – 1600ccUS$22550
6From 1601 – 1800cc (Excluding Jeeps)US$27940

یہ بتانا ضروری ہے کہ وفاقی حکومت نے افراد کی آمد و رفت کے لئے ایشین سامان کی واجباتی ڈیوٹی اور ٹیکس کا تعی .ن کیا ہے ، جیسا کہ ان کی جسمانی حالت سے قطع نظر اس پر بحث کی گئی ہے۔ ایف بی آر نے کہا کہ کسٹم افسران کے پاس قابل اطلاق فرائض / ٹیکس میں اضافہ / کمی کرنے کا صوابدیدی اختیار نہیں ہے۔

Top-Tax-Consultants-Lahore-Pakistan
Ads:
Top-Tax-Consultants-Lahore-Pakistan-Global-Tax-Consultants-Tax-News-FBR
ads

Fayyaz

Read Previous

پاکستان نے موبائل فون کی درآمد کے لئے 119.22 ارب روپے ادا کیے

Read Next

ایف بی آر نے کراچی میں غیر منقولہ جائیدادوں کی قیمت کا جائزہ لیا

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *